Suno News
ہراساں کرنے والے ہدایت کار کا نام جلد بتاؤں گی، نادیہ جمیل
Image
لاہور: (ویب ڈیسک) پاکستان کی سینئر اداکارہ و سماجی کارکن نادیہ جمیل نے ایک بار پھر سے ہراسگی کا انکشاف انکشاف کیا ہے، انکا کہنا ہے کہ انہیں ماضی میں فلم، ڈرامہ انڈسٹری سے وابستہ ہدایت کار نے ہراسگی کا نشانہ بنایا، جس کا نام وہ جلد بتائیں گی۔

 عفت عمر کے پوڈکاسٹ میں شرکت کے دوران سینئر اداکارہ نادیہ جمیل نے کسی بھی ہدایت کار کا نام لیے بغیر انکشاف کیا انہیں ماضی میں ہدایت کار نے ہراساں کرنے کی پوری پوری کوشش کی تھی، اس واقعہ کے بعد انہوں نے دوبارہ کبھی بھی اس ہدایت کار کے ساتھ کسی بھی پراجیکٹ میں کام نہیں کیا اور مذکورہ ہدایت کار حالیہ دنوں میں بہت کامیاب بھی ہیں۔

 

نادیہ جمیل کا کہنا تھا کہ وہ مشکل سے بچنے کی کوشش کرتی ہیں اور ایسے لوگوں سے ہمیشہ دور رہتی ہیں جو اُن کی زندگی میں مشکلات پیدا کریں۔

 

نادیہ جمیل نے یہ بھی انکشاف کیا کہ ساتھی فنکار نعمان اعجاز نے ایک ڈرامے کی آفر کی تھی کی لیکن میں نے نہ کردی کیوں کہ اس ڈرامے کا ہدایت کار وہی شخص تھا۔ اسی وجہ سے خود ہی اس پروجیکٹ سے پیچھے ہٹ گئیں۔

 

نادیہ جمیل نے مزید بتایا کہ وہ بہت جلد اس ہدایت کار کا نام بتائیں گی کیونکہ اس نے اب تک نہ جانے کتنی اور لڑکیوں کو ہراسگی کا نشانہ بنایا ہو۔

 

نادیہ جمیل نے بتایا کہ اس ہدایت کار کا نام اس وجہ سے بتاؤں گی تاکہ مستقبل میں مزید لڑکیاں اس کا نشانہ بننے سے بچ سکیں لیکن ابھی اس کا نام نہیں لے سکتی۔

 

نادیہ جمیل نے وجہ بتائی کہ ابھی میرے بیٹے چھوٹے ہیں، ان کا خون گرم ہے، اگر انہیں پتا چل گیا کہ وہ کون ہے تو وہ پتا نہیں کیا کر بیٹھیں گے، یہ تھوڑے اور بڑے اور سمجھ دار ہوجائیں تو میں اس کا نام خود بتاؤں گی۔

 

اداکارہ نے جولائی 2022 میں کی گئی ٹوئٹس میں بتایا تھا کہ وہ پہلی بار محض 4 برس کی عمر میں نشانہ بنیں، دوسری بار پھر وہ 9 برس کی عمر کی تھیں تب جب کہ تیسری بار 17 اور چوتھی بار 18 برس کی عمر میں جنسی ہراسانی کا نشانہ بنیں۔

 

نادیہ جمیل نے بتایا تھا کہ انہیں کم عمری میں جنسی ہراسانی کے غم سے نکلنے میں کئی سال لگے، وہ کافی وقت تک ڈپریشن، خوف، صدمے اور شدید عذاب میں مبتلا رہیں۔