Suno News
پاکستانی ٹیم کی کوچنگ،چاہت فتح علی خان نے حامی بھر لی
Image
لاہور: (ویب ڈیسک) پاکستانی نژاد گلوکار چاہت فتح علی خان نے ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ میں پاکستانی کرکٹ ٹیم کی ناقص کارکردگی کے بعد قومی ٹیم کی کوچنگ کے لیے اپنی خدمات پیش کرنے کی پیشکش کی ہے۔
 
 ایک نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے، چاہت فتح علی خان نے اپنے کرکٹ کے تجربات اور مطالبات کا تفصیل سے ذکر کیا۔
 
چاہت فتح علی خان کا کرکٹ کا تجربہ:
 
چاہت فتح علی خان نے بتایا کہ جب وہ لندن کے ایک اسکول کی ٹیم کے کپتان تھے تو مشہور کرکٹر عاقب جاوید کے والد انہیں ان کے پاس لے کر آئے اور کہا کہ ان کا بیٹا ٹیم میں شامل کیا جائے۔ انہوں نے عاقب جاوید کا ٹرائل لیا اور انہیں اسکول کی ٹیم میں شامل کر لیا۔
 
وقار یونس کے ساتھ رہائش:
 
چاہت فتح علی خان نے مزید بتایا کہ وقار یونس، عاقب جاوید، مشتاق احمد اور سعید انور کے لندن میں قیام کے دوران انہوں نے ان کرکٹرز کی میزبانی کی۔ انہوں نے ذکر کیا کہ عمران خان نے ان کھلاڑیوں کو مختلف ٹیموں کے لیے ٹرائل دینے کی ہدایت کی تھی اور یہ سب کھلاڑی اس دوران ان کے ساتھ رہے۔
 
وقار یونس کی کہانی:
 
چاہت فتح علی خان نے بتایا کہ وقار یونس تقریباً ساڑھے تین ماہ ان کے ساتھ رہے۔ بعد ازاں، وقار یونس کا سرے کاؤنٹی کے ساتھ معاہدہ ہوا اور وہ اپنے فلیٹ میں منتقل ہو گئے۔
 
پاکستانی کرکٹ ٹیم کی کوچنگ کے لیے رضامندی:
 
پاکستانی کرکٹ ٹیم کی کوچنگ کے حوالے سے سوال پر، چاہت فتح علی خان نے اپنی دلچسپی اور عزم ظاہر کیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ کافی عرصے سے سن رہے ہیں کہ پاکستانی ٹیم کے کئی کوچ ہیں، لیکن ایک ہی کوچ کافی ہوتا ہے جو ٹیم کو بہتر انداز میں چلا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا، "میں ایک ہی کوچ ہوں گا، مجھے نہ باؤلنگ کوچ کی ضرورت ہے، نہ بیٹنگ کوچ کی اور نہ فیلڈنگ کوچ کی۔"
 
کوچنگ کے مطالبات:
 
چاہت فتح علی خان نے کہا کہ وہ ٹیم کے لیے حاضر ہیں اور صرف ایک ہی کوچ کی تنخواہ لیں گے۔ انہوں نے کہا، "مجھے ایک ہی کوچ کی حیثیت سے کام کرنے دیا جائے، اور میں ٹیم کو بہترین کارکردگی دکھانے کے قابل بناؤں گا۔"
 
کرکٹرز کے ساتھ تعلقات:
 
چاہت فتح علی خان نے کہا کہ ان کے بیشتر کرکٹرز کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں اور وہ ان کے ساتھ پریکٹس کرتے رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ حالیہ دورہ پاکستان کے دوران ان کی مشتاق احمد سے ملاقات ہوئی تھی، لیکن وقار یونس سے کوئی رابطہ نہیں ہو سکا کیونکہ ان کی زندگی بہت مصروف ہو گئی ہے۔
 
چاہت فتح علی خان کی پیشکش پاکستانی کرکٹ کے مداحوں کے لیے دلچسپی کا باعث بن سکتی ہے۔ 
 
 دیکھنا یہ ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ اس پیشکش پر کیا ردعمل ظاہر کرتا ہے اور چاہت فتح علی خان کو کوچنگ کے میدان میں موقع ملتا ہے یا نہیں۔