Suno News
زمین کی جانب ایک خطرناک سیارچہ بڑھنے لگا
Image
واشنگٹن: (ویب ڈیسک)امریکی خلائی ایجنسی ناسا نے خبردار کیا ہے کہ ایک بڑا سیارچہ تیزی سے زمین کی طرف بڑھ رہا ہے۔ ناسا کی معلومات کے مطابق، یہ سیارچہ 65,215 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ہماری سمت بڑھ رہا ہے اور اسے "2024 MT-1" کا نام دیا گیا ہے۔ اس سیارچے کا قطر تقریباً 260 فٹ ہے ۔
 
نیئر ارتھ آبجیکٹ آبزرویشن پروگرام:
 
ناسا نے سب سے پہلے اس سیارچے کو نیئر ارتھ آبجیکٹ آبزرویشن پروگرام کے ذریعے دریافت کیا۔ زمین پر موجود دوربینوں، بڑے آلات، اور ریڈار کی مدد سے اس کی نگرانی کی جارہی ہے۔
 
 2024 MT-1 کے سائز اور رفتار نے سائنسدانوں کی تشویش میں اضافہ کر دیا ہے، مگر ناسا نے یقین دلایا ہے کہ فی الحال اس کے زمین سے ٹکرانے کا کوئی خطرہ نہیں ہے۔
 
سیارچے کا مدار:
 
ناسا کی جیٹ پروپلشن لیبارٹری (JPL) اس سیارچے کے مدار کی نگرانی کر رہی ہے۔ 2024 MT-1 زمین سے 1.5 ملین کلومیٹر کے فاصلے سے گزرے گا، جو کہ زمین اور چاند کے درمیان فاصلے سے تقریباً چار گنا زیادہ ہے۔
 
شہاب ثاقب کے خطرات:
 
ایسے سیارچے کی شکل خطرناک ہوتی ہے اور اگر 2024 MT-1 جیسے الکا زمین سے ٹکراتے ہیں تو وہ آگ، سونامی، دھماکے، اور دیگر تباہیاں پھیلانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔
 
 ناسا کا پلینیٹری ڈیفنس کوآرڈینیشن آفس (PDCO) ایسے خطرات سے نمٹنے کے لئے مستقل کام کر رہا ہے اور ایسی ٹیکنالوجی تیار کرنے میں مصروف ہے جس سے ان خطرات سے بچا جا سکے۔
 
پلینیٹری ڈیفنس کی تیاری:
 
PDCO کی جانب سے جاری کی گئی معلومات کے مطابق، سیارچوں کے خطرات کا جائزہ لیا جارہا ہے اور مختلف حکمت عملیوں پر کام کیا جارہا ہے تاکہ زمین کو ممکنہ تباہی سے بچایا جا سکے۔ 
 
ناسا کی ٹیم مسلسل نگرانی اور منصوبہ بندی میں مصروف ہے تاکہ مستقبل میں آنے والے خطرات سے محفوظ رہا جا سکے۔
 
یہ خبردار کرنے والی رپورٹ ناسا کی سائنسدانوں کی ٹیم کی جانب سے جاری کی گئی ہے، جو کہ زمین کی حفاظت کے لیے مسلسل کام کر رہی ہے۔ اس سیارچے کی نگرانی اور مستقبل کی تیاریوں کا یہ سلسلہ ہمارے سیارے کو محفوظ رکھنے کے عزم کی علامت ہے۔