12 April 2024

Homeپاکستانالخدمت فاؤنڈیشن کیجانب سے غزہ متاثرین میں امدادی سامان تقسیم

الخدمت فاؤنڈیشن کیجانب سے غزہ متاثرین میں امدادی سامان تقسیم

الخدمت فائونڈیشن کی جانب سے غزہ متاثرین میں امدادی سامان کی تقسیم کی جارہی ہے

الخدمت فاؤنڈیشن کیجانب سے غزہ متاثرین میں امدادی سامان تقسیم

لاہور:(سنونیوز)الخدمت فاؤنڈیشن نے غزہ متاثرین کے لیے 15 کروڑ کا امدادی سامان تقسیم اور مزید 50 کروڑ مختص کردیے۔ الخدمت فاؤنڈیشن اور پاکستان اسلامک میڈیکل ایسوسی ایشن کی میڈیکل ٹیمیں غزہ جانے کے لیے تیار ہیں۔ پاکستانی قوم آگے بڑھ کر مصیبت زدہ فلسطینیوں کی مدد کرے۔

تفصیلات کے مطابق الخدمت فاؤنڈیشن پاکستان کے صدر ڈاکٹرحفیظ الرحمن نے کہاکہ الخدمت کا بین الاقوامی رفاہی اداروں کے اشتراک سے 7 اکتوبر سے غزہ میں ریلیف آپریشن جاری ہے۔ غزہ اِس وقت شدید انسانی بحران کا شکار ہے جہاں پانی، خوراک اور طبی امداد کی اشد ضرورت ہے۔

صدر الخدمت فائونڈیشن کے مطابق الخدمت نے فوری طورپر غزہ میں موجود بین الاقوامی رفاہی اداروں کے اشتراک سےمیسر و موجود وسائل کو بروئے کار لاتے ہوئے امدادی سرگرمیوں کا آغاز کیا اور ہسپتالوں میں زیر علاج مریضوں اور سکولوں میں قائم کیمپوں میں پکے پکائے کھانے اور موسمی اثرات سے بچاؤ کے لیے ونٹر پیکج کی تقسیم کا کام جاری رکھے ہوئے ہے۔

الخدمت فائونڈیشن کی جانب سے اِسی طرح آبادیوں میں خشک راشن تقسیم کیا جا رہا ہے اور ابتدائی طور پر ہسپتالوں کو ادویات کی فراہمی کی گئی ہے ۔الخدمت فاؤنڈیشن کے تحت اب تک 15 کروڑ کا امدادی سامان فراہم کیا جا چکا ہے اور مزید 50 کروڑ روپے بھی غزہ متاثرین کے لیے مختص کر دیے گئے ہیں۔

ڈاکٹرحفیظ الرحمن نے کہا کہ غزہ کے محاصرے کے باعث فلحال غزہ کے اندر سے دستیاب امدادی سامان کے ذریعے ریلیف کاکام جاری ہے، اس کے علاوہ الخدمت فاؤنڈیشن بین الاقوامی اداروں کے ذریعے امدادی سامان رفح بارڈر پر پہنچا چکی ہے جہاں رفاہ بارڈر کچھ وقت کے لیے بھی کھلا تو امدادی سامان کے ٹر ک متاثرہ علاقوں تک پہنچ جائیں گے۔

ڈاکٹرحفیظ الرحمن نے کہا کہ متاثرہ علاقے میں قائم ترکش فرینڈ ہاسپٹل میں موجود ترک ڈاکٹر نے بتایا کہہاسپٹل میں صرف 24 گھنٹوں کا ڈیزل اور فیول باقی رہ گیا ہے وہ ختم ہوتے ہی میڈیکل سروسز بند ہوجائیں گی۔

صدر الخدمت فائونڈیشن کے مطابق الخدمت کی خدمات کو ملک و بیرون ممالک قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔ جب بھی مصیبت کی گھڑی میں الخدمت نے اپیل کی، درد دل رکھنے والے خواتین و حضرات نے دل کھول کر عطیات دیے۔ ہمیں امید ہے کہ پاکستانی قوم فلسطینیوں کی مدد کو آگے بڑھے گی۔ دیگر این جی اوزادارے ہمارے ساتھ مل کرکام کرنا چاہیں تو ہم ایک دوسرے کے دست و بازو بن کر نازک ترین حالات میں فلسطینی متاثرہ عوام کی خدمت کریں گے۔

Share With:
Rate This Article