12 April 2024

Homeتازہ ترینسپیس ایکس کا مشن Ax-3 کب لانچ ہوگا؟ لائیو کیسے دیکھا جائیگا؟

سپیس ایکس کا مشن Ax-3 کب لانچ ہوگا؟ لائیو کیسے دیکھا جائیگا؟

SpaceX on track to launch private Ax-3 astronaut mission

سپیس ایکس کا مشن Ax-3 کب لانچ ہوگا؟ لائیو کیسے دیکھا جائیگا؟

کیلیفورنیا:(ویب ڈیسک) سپیس ایکس اپنا اے ایکس 3 مشن خلا میں بین الاقوامی خلائی سٹیشن کے لیے لانچ کرنے جا رہا ہے، یہ مشن سپیس ایکس آج لانچ کرے گا اور اس لانچ کو سپیس ڈاٹ کام پر لائیو دیکھا جا سکتا ہے۔

نجی Ax-3 مشن پر بین الاقوامی خلائی سٹیشن کے لیے خلابازوں کو روانہ کیا گیا ہے لیکن اگر آپ اسے آن لائن لائیو دیکھنے کی امید کر رہے ہیں، تو آپ کو یہ جاننے کی ضرورت ہوگی کہ آپ سے اوپر دی گئے یو ٹیوب چینل پر دیکھ سکتے ہیں۔

YouTube video player

Ax-3 مشن تیسری تجارتی خلائی پرواز فالکن 9 راکٹ اور اس کے ڈریگن خلائی جہاز فریڈم پر سوار ہو کر فلوریڈا کے کیپ کیناورل میں ناسا کے کینیڈی سپیس سینٹر سے نکلے گا، اس مشن میں چار خلا بازوں کو روانہ کیا جا رہا ہے۔

Space X Mission astronauts

Space X Mission astronauts

اس مشن کو ناسا کے خلاباز مائیکل لوپیز کمانڈ کر رہے ہیں جس میں اطالوی فضائیہ کے والٹر ولاڈی پائلٹ کے طور پر خدمات انجام دے رہے ہیں، مشن پر ایک ساتھ چار آدمی اپنے آئی ایس ایس مشن پر خلا میں کم از کم دو ہفتے گزاریں گے۔

Distance, Space AX 3

Distance, Space AX 3

فی الحال سپیس ایکس کا مقصد Ax-3 خلابازوں کو آج 18 جنوری کو مدار میں بھیجنا ہے، سپیس ایکس مشن اے ایکس 3 کو ایک ونڈومیںمشن شروع کرنا ہے، اگر کمپنی اس عین وقت پر لانچ نہیں کر سکتی ہے، تو اسے بین الاقوامی خلائی سٹیشن تک پہنچنے کے لیے اپنے اگلے موقع تک کھڑے ہونا پڑے گا اور پھر یہ مشن کی لانچنگ جمعہ 19 جنوری کو ممکن ہو سکے گی۔
مزید پڑھیں

خلا سے بلی کی ویڈیو زمین پر بھیجنے کا پہلا کامیاب تجربہ


سپیس ایکس نے مشن اے ایکس 3 کو ابتدائی طور پر نومبر 2023 میں شروع کرنے کی امید ظاہر کی تھی لیکن پرواز جنوری 2024 اور پھر جنوری کے وسط تک چلی گئی کیونکہ موسمی مسائل نے سپیس ایکس کی دیگر پروازوں کی سیریز میں مشن سے پہلے تاخیر کی۔

ناسا کا لائیو سٹریم ناسا ٹی وی اورناسا پلس پر نشر کیا جائے گا، ایجنسی سپیس ایکس پروگرام شام 3:45 پر نشر کرے گی، ناسا کی لانچ کوریج لفٹ آف کے تقریباً 15 منٹ بعد ختم ہو جائے گی۔

Share With:
Rate This Article