12 April 2024

Homeپاکستانقومی سلامتیپاکستان کے دفاع کو مضبوط بنانے کے لیے کام جاری رکھیں گے:آرمی چیف

پاکستان کے دفاع کو مضبوط بنانے کے لیے کام جاری رکھیں گے:آرمی چیف

پاکستان کے دفاع کو مضبوط بنانے کے لیے کام جاری رکھیں گے:آرمی چیف

پاکستان کے دفاع کو مضبوط بنانے کے لیے کام جاری رکھیں گے:آرمی چیف

ٹیکسلا:(ویب ڈیسک )پاک فوج کے سربراہ جنرل سید عاصم منیر نے کہا ہے کہ پاکستان کے دفاع کو یقینی اور مضبوط بنانے کے لئے ہم خود انحصاری اور جدید ترین ٹیکنالوجی کے لئے کام جاری رکھیں گے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق پاکستان آرڈیننس فیکٹری کے دورہ کے موقع پرآرمی چیف کو پی او ایف کی پیداواری صلاحیت، پاکستان کی مسلح افواج کی دفاعی ضروریات کو پورا کرنے میں اس کے تعاون اور برآمدی صلاحیت کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔

آرمی چیف نے پی او ایف مصنوعات کی وسیع رینج کا مشاہدہ کیا جس میں ٹیسٹ اور ٹرائلز کے تحت مقامی طور پر ڈیزائن اور تیار کردہ نئے ہتھیار اور بارود شامل ہیں۔

پی او ایف افسران اور عملے سے خطاب کرتے ہوئے آرمی چیف نے پی او ایف کو پاکستان کی اہم دفاعی صنعت بنا کر ملکی سلامتی اور معیشت میں ان کے کردار کو سراہا۔قومی ترقی کا راستہ پی او ایف واہ جیسی مقامی صنعتوں سے متعین ہوتا ہے۔قبل ازیں آمد پر چیئرمین پی او ایف واہ نے آرمی چیف کا استقبال کیا۔

اس سے قبل آرمی چیف جنرل سید عاصم منیر نے کہا  کہ مسلح افواج ہر جارحیت کو ناکام بنانے کیلئے پوری طرح تیار ہیں۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق پاک فضائیہ کے آپریشنل بیس پر انڈکشن اینڈ آپریشنلائزیشن کی تقریب منعقد ہوئی۔ اس تقریب میں پاک فوج کے سربراہ آرمی چیف جنرل سید عاصم منیرنے بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔

بیس پر پہنچنے پرپاک فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل ظہیر احمد بابر سدھو نے آرمی چیف جنرل سید عاصم منیر کاپرتپاک استقبال کیا۔ تقریب میں پی اے ایف کے نئے شامل کیے گئے ہتھیاروں کے نظام اور دفاعی اثاثوں کی نمائش کی گئی۔آرمی چیف کی آمد پر پاک فضائیہ کے چاق و چوبند دستے نے آرمی چیف کو گارڈ آف آنر پیش کیا۔

یہ بھی پڑھیں:

ہر قسم کے مافیا کی سرکوبی کرینگے: آرمی چیف

اس موقع پر اپنی تقریر کے دوران ایئر چیف مارشل ظہیر احمد بابر سدھو نے پاک فضائیہ میں ہتھیاروں کی تازہ ترین شمولیت پر روشنی ڈالی جس میں J-10C لڑاکا طیاروں، ایئر موبلٹی پلیٹ فارمز، جدید ریڈارز، بغیر پائلٹ کے فضائی نظام، لوئٹرنگ جنگی صلاحیتوں اور لانگ رینج ویکٹرز شامل ہیں جنہوں نے ملک کی فضائی دفاعی صلاحیتوں میں نمایاں اضافہ کیا ہے۔

ایئر چیف مارشل ظہیر احمد بابر سدھو نےیہ بھی بتایا کہ سینٹر آف ایکسی لینس فار ایئر موبلٹی اینڈ ایوی ایشن سیفٹی، کالج آف ایئر ڈیفنس اور ایئر پاور سینٹر آف ایکسی لینس کی بحالی کے ساتھ ساتھ نیشنل ایرو اسپیس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی پارک کے آپریشنلائزیشن نے پی اے ایف کو ابھرتے ہوئے چیلنجوں سے باخبر رہنے کی صلاحیت فراہم کی ہے۔ انہوں نے ملک کے ناقابل تسخیر دفاع کو یقینی بنانے کے لیے سائبر اور خلائی ٹیکنالوجیز کے ابھرتے ہوئے ڈومینز میں پی اے ایف کی جانب سے حاصل کی گئی پیش رفت پر زور دیا۔

آرمی چیف جنرل سید عاصم منیر نے جدید ترین ہتھیاروں کے نظام کو شامل کرنے اور پاک فضائیہ کی آپریشنل تیاریوں کو سراہا اور کہا کہ پاکستان کی مسلح افواج کسی بھی جارحیت کو ناکام بنانے کے لیے پوری طرح تیار ہیں۔آرمی چیف نے غزہ تنازعہ کے متاثرین کے لیے امدادی سامان کی نقل و حمل کے لیے پاک فضائیہ کی کوششوں کو بھی سراہا۔ ان کا کہنا تھا کہ فضائیہ میں اسٹیٹ آف دی آرٹ ویپن سسٹم کی شمولیت بڑی کامیابی ہے ۔ پاک فضائیہ خطے میں طاقت کوتوازن کومستحکم کررہی ہے۔ فضائیہ کی جدیدٹیکنالوجی کےحصول کی جدوجہدقابل تقلید ہے۔

Share With:
Rate This Article