23 February 2024

Homeکھیلکرکٹبلے باز کلین بولڈ ہونے کے باوجود ناٹ آئوٹ قرار

بلے باز کلین بولڈ ہونے کے باوجود ناٹ آئوٹ قرار

بلے با ز کلین بولڈ ہونے کے باوجود ناٹ آئوٹ قرار

بلے باز کلین بولڈ ہونے کے باوجود ناٹ آئوٹ قرار

کینبرا: (ویب ڈیسک) ہم سب اس بات سے واقف ہیں کہ کرکٹ میں گیند اگر وکٹوں سے جاٹکرائے تو بلے باز پویلین لوٹ جاتا ہے لیکن آسٹریلیا میں دوران میچ ایسا واقعہ پیش آیا جس نے شائقین کرکٹ کو چکرادیا۔

آسٹریلوی میڈیا کے مطابق آسٹریلیا کے دارالحکومت کینبرا میں ویسٹرن ڈسٹرکٹس کے مابین کھیلے جارے تھرڈ گریڈ میچ کے دوران بائولر نے بیٹسمین کو کلین بولڈ کردیا تاہم حیر ت انگیز طور پر وہ ناٹ آؤٹ رہا۔

ناٹ آئوٹ ہونے کی وجہ انتہائی دلچسپ تھی کہ گیند وکٹ کو آکر لگی لیکن اس کے باوجود دونوں بیلز نہیں گریں اور نہ ہی تینوں میں سے ایک بھی اسٹمپ مکمل طور پر اکھڑ سکا جس پر امپائرز نے اسے آؤٹ قرار نہیں دیا۔

ایم سی سی کا قانون یہ کہتا ہے کہ بلے باز کو تب تک بولڈ آؤٹ نہیں قرار دیا جاسکتا ہے جب تک اسٹمپ کے اوپر سے کم از کم ایک بیل مکمل طور پر نہ گرے یا کم ازکم ایک یا اُس سے زیادہ اسٹمپ مکمل طور پر زمین سے نہ اُکھڑ جائیں۔

سوشل میڈیا صارفین نے کرکٹ کی تاریخ کے اس انوکھے واقعے پر اپنے ملے جلے ردعمل کا اظہار کیا ہے۔ بعص صارفین کا کہنا تھا کہ ایسا زندگی میں صرف ایک بار ہی دیکھنے کو مل سکتا ہے۔کرکٹ میں اس طرح کے واقعات شاذوناذر ہی دیکھنے کو ملتے ہیں جو شائقین کرکٹ کو چونکا دیتے ہیں اور وہ اس کھیل کو لے کر اور زیادہ دلچسپی دکھانا شروع کردیتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:

آئی سی سی کا انوکھا قانون، اینجلو میتھیوز بغیر کھیلے آئوٹ

چند دن قبل نیوزی لینڈ کے خلاف جاری ٹیسٹ سیریز میں بنگلہ دیش کے سابق کپتان اور بیٹر مشفیق الرحیم ڈھاکہ میں نیوزی لینڈ کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میں بیٹنگ کرتے ہوئے ہاتھوں سے گیند کا دفاع کرنے پر آؤٹ ہو گئے۔

تفصیلات کے مطابق مشفیق الرحیم نے گیند کا دفاع کرنے کے بعد اسے اپنے ہاتھوں سے دور دھکیل دیا، جس کے بعد وہ بنگلہ دیش کے پہلے کھلاڑی بن گئے ہیں جنہیں گیند کو ہاتھ سے روکنے پر آؤٹ قرار دیا گیا۔

مشفیق الرحیم نے بنگلہ دیش کی پہلی اننگز کے 41ویں اوور میں کائل جیمیسن کی گیند کا دفاع کیا، جیسے ہی انہیں احساس ہوا کہ گیند کریز کے قریب اچھل کر سٹمپ پر جا سکتی ہے، انہوں نے اسے اپنے ہاتھ سے دوسری جانب دھکیل دیا۔

مشفیق الرحیم کا ایسا کرنا ہی تھا کہ نیوزی لینڈ کے فیلڈرز نے فوری طور پر فیلڈ میں رکاوٹ ڈالنے کی اپیل کر دی۔ نیوزی لینڈ کی اپیل پر آن فیلڈ امپائرز اکٹھے ہوئے اور معاملے پر تھرڈ امپائر کی مدد لی، جو ری پلے چیک کرنے کے بعد مطمئن ہو گئے کہ مشفیق الرحیم نے گیند کو ہاتھ سے روکنے کی کوشش کی اور رحیم کو آؤٹ قرار دے دیا گیا۔

مشفیق الرحیم ٹیسٹ میچز میں گیند کا ہاتھ سے دفاع کرتے ہوئے آؤٹ ہونے والے آٹھویں اور مینز کرکٹ میں مجموعی طور پر 11ویں بیٹر بن گئے۔

Share With:
Rate This Article