12 April 2024

Homeکھیلکرکٹسری سانتھ اور گوتم گھمبیر کے درمیان جھگڑا

سری سانتھ اور گوتم گھمبیر کے درمیان جھگڑا

سری سانتھ اور گوتم گھمبیر کے درمیان جھگڑا

سری سانتھ اور گوتم گھمبیر کے درمیان جھگڑا

ممبئی: (سنو نیوز) سابق ہندوستانی بائولر ایس سری سانتھ نے گوتم گمبھیر کے ساتھ اپنے جھگڑے پر غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے میرے لیے ایسے الفاظ استعمال کیے جو انہیں بالکل بھی استعمال نہیں کرنے چاہیے تھے۔

لیجنڈز لیگ کرکٹ میں گجرات جائنٹس اور انڈیا کیپٹلز کے درمیان میچ ہو رہا تھا اور اس دوران سری سانتھ اور گوتم گمبھیر کے درمیان جھگڑا ہوا اور اس کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی۔ اس ویڈیو کے منظر عام پر آنے کے بعد سری سانتھ نے ایک ویڈیو جاری کی اور اس معاملے پر بات کی۔ سری سانتھ نے ویڈیو میں کہا کہ ‘مسٹر فائٹر’ (گمبھیر) ہر کھلاڑی سے لڑتے رہتے ہیں۔

انہوں نے کہا، “میں کچھ واضح کرنا چاہتا ہوں کہ مسٹر فائٹر کے ساتھ کیا ہوا، جو ہمیشہ اپنے ساتھی کھلاڑیوں سے لڑتے رہتے ہیں۔ وہ اپنے سینئر کھلاڑیوں کی عزت بھی نہیں کرتے۔”اس نے آکر میرے لیے ایسے برے الفاظ استعمال کیے جوگوتم گمبھیر کو نہیں کہنے چاہیے تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ گمبھیر نے جو کچھ کیا وہ آپ کو جلد یا بدیر معلوم ہو جائے گا۔ اس نے جو الفاظ استعمال کیے اور وہ الفاظ جو انہوں نے کرکٹ کے میدان میں استعمال کیے تھے۔ قابل قبول نہیں ہے۔

خیال رہے کہ گوتم گمبھیر گجرات ٹیم کے مینٹور ہیں اور سری سانتھ ٹیم کے لیے کھیل رہے تھے۔ ان کا کہنا ہے کہ گمبھیر نے میدان میں ان کے خلاف قابل اعتراض الفاظ استعمال کیے تھے۔ وہ ٹیم کی نمائندگی کرتے ہیں لیکن وہ اپنے ساتھی ساتھیوں کا احترام نہیں کرتے۔

یہ بھی پڑھیں:

سابق انڈین کھلاڑی سری سانتھ بری طرح پھنس گئے

خیال رہے کہ کچھ روز قبل انڈیا کے سابق کرکٹر سری سانتھ ایک کیس میں بری طرح پھنس گئے ہیں، ان کیخلاف کیرالہ میں مقدمہ درج کر لیا گیا تھا۔انڈین میڈیا کے مطابق سابق کرکٹر ایس سری سانتھ کے خلاف درج مقدمے میں 2 دیگر ملزموں کے خلاف دھوکا دہی کی شکایت درج کرائی گئی ہے۔ ان تینوں کے خلاف انڈین پینل کورٹ( آئی پی سی) کی دفعہ 420 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے، جو 18.70 لاکھ روپے سے متعلق ہے۔

کیرالہ کے شمالی ضلع میں پولیس نے کرکٹر ایس سری سانتھ اور دو ساتھیوں – راجیو کمار اور وینکٹیش کنی کے خلاف قانونی کارروائی شروع کی ہے۔ یہ معاملہ چونڈہ کے ایک رہائشی کی طرف سے درج کرائی گئی دھوکا دہی کی شکایت سے متعلق ہے۔

شکایت کنندہ، جس کی شناخت سریش گوپالن کے نام سے ہوئی ہے، نے الزام لگایا ہے کہ راجیو کمار اور وینکٹیش کنی نے 25 اپریل 2019 ء سے شروع ہونے والی مختلف تاریخوں پر اس سے کل 18.70 لاکھ روپے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ یہ رقم کولور، کرناٹک میں اسپورٹس اکیڈمی قائم کرنے کے لیے استعمال کی جائے گی۔ جبکہ سری سانتھ اکیڈمی میں مبینہ طور پر پارٹنر ہیں۔

گوپالن نے اسپورٹس اکیڈمی میں شراکت دار بننے کے وعدے کی بنیاد پر اپنا پیسہ لگایا تھا۔ اس نے اب ایک شکایت درج کرائی ہے جس میں مبینہ دھوکا دہی کی سرگرمیوں کی تفصیل دی گئی ہے۔ سری سانتھ اور ان کے ساتھیوں کے خلاف آئی پی سی کے سیکشن 420 کے تحت قانونی کارروائی درج کی گئی ہے، جو ‘جعل سازی اور بے ایمانی سے جائیداد کی فراہمی’ سے متعلق ہے۔ تینوں کو خاص طور پر پہلے اور دوسرے ملزم کے طور پر درج کیا گیا ہے، جبکہ سری سانتھ کو کیس میں تیسرے ملزم کے طور پر نامزد کیا گیا ہے۔

یہ بھی ذہن میں رہے کہ سابق انڈین کرکٹر سری سانتھ کا تنازعات میں آنا کوئی نئی بات نہیں ہے۔ وہ پہلے آئی پی ایل کے دوران ‘سلیپ گیٹ’ میں ملوث تھے۔ یہی نہیں بلکہ وہ آئی پی ایل 2013 ء میں اسپاٹ فکسنگ کیس میں بھی مجرم قرار پائے تھے۔

سری سانتھ لیجنڈز لیگ کرکٹ میں گجرات جائنٹس کے لیے اپنا کھیل کھیل رہے ہیں۔ سری سانتھ کو حال ہی میں آئی سی سی مینز کرکٹ ورلڈ کپ 2023 ء کے دوران کئی پلیٹ فارمز پر کمنٹیٹر کے طور پر دیکھا گیا ہے۔

Share With:
Rate This Article