Homeتازہ ترینپاکستان سیمی فائنل کی دوڑ میں شامل، انڈیا کیساتھ میچ کا امکان؟

پاکستان سیمی فائنل کی دوڑ میں شامل، انڈیا کیساتھ میچ کا امکان؟

روہت شرما اور بابر اعظم

پاکستان سیمی فائنل کی دوڑ میں شامل، انڈیا کیساتھ میچ کا امکان؟

لاہور: (ویب ڈیسک) بھارت میں جاری کرکٹ ورلڈ کپ میں آہستہ آہستہ جوش و خروش بڑھتا جا رہا ہے۔ یہ سیمی فائنل تک پہنچنے کی دوڑ کی سنسنی ہے۔ بدھ کو جنوبی افریقا اور نیوزی لینڈ کے درمیان ہونے والے میچ کے بعد یہ دوڑ مزید دلچسپ ہو گئی ہے۔

جنوبی افریقا نے نیوزی لینڈ کو 190 رنز کے بڑے مارجن سے شکست دے کر سیمی فائنل کی دوڑ کو مزید پیچیدہ کر دیا ہے۔ نیوزی لینڈ کی ٹیم نے اس مقابلے میں اچھی شروعات کی تھی۔ لیکن وہ یہ میچ ہار گئی ۔ نیوزی لینڈ کی بڑی شکست کا سب سے زیادہ فائدہ جس ٹیم کو ہوا وہ پاکستانی ٹیم ہے۔ پاکستان ٹیم جو مسلسل چار میچ ہارنے کے بعد مقابلے سے باہر ہونے کے خطرے سے دوچار تھی، اچانک دوڑ میں نظر آنے لگی ہے۔

بنگلادیش کو بڑے مارجن سے شکست:

پاکستان نے بنگلادیش کو بڑے مارجن سے شکست دی تھی اور اب نیوزی لینڈ کی ٹیم بڑے مارجن سے ہار گئی ہے۔ پوائنٹس پر نظر ڈالیں تو نیوزی لینڈ اس وقت چوتھے اور پاکستان پانچویں نمبر پر ہے۔ نیوزی لینڈ کے سات میچوں سے آٹھ پوائنٹس ہیں جبکہ پاکستان کے سات میچوں سے چھ پوائنٹس ہیں اور اگلا میچ پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان ہے۔

اگر پاکستان کو سیمی فائنل میں پہنچنا ہے تو اسے اپنے دونوں میچ جیتنا ہوں گے۔ پاکستان کو نیوزی لینڈ کے علاوہ انگلینڈ کے ساتھ بھی میچز کھیلنے ہیں۔ اپنے دونوں میچ جیتنے کے ساتھ ساتھ پاکستان کو یہ دعا بھی کرنی ہوگی کہ نیوزی لینڈ اپنے بقیہ میچ ہار جائے۔

پاکستان کے علاوہ نیوزی لینڈ کو سری لنکا کے ساتھ ایک میچ کھیلنا ہے۔ اگر پاکستان ٹیم اپنے باقی دونوں میچ جیت لیتی ہے لیکن نیوزی لینڈ کی ٹیم سری لنکا کو شکست دیتی ہے۔تو معاملہ نیٹ رن ریٹ پر آئے گا۔ کیونکہ دونوں ٹیموں کے پوائنٹس برابر ہوں گے ۔ اس صورتحال میں پاکستان کو دونوں میچز بڑے مارجن سے جیتنا ہوں گے۔

پاکستان کے شائقین کرکٹ میں امید کی نئی کرن:

جنوبی افریقا کی نیوزی لینڈ کو شکست دیتے ہی پاکستان کے شائقین کرکٹ میں امید کی نئی کرن نظر آنے لگی ہے۔ سوشل میڈیا پر کئی طرح کے میمز وائرل ہونے لگے ہیں۔ پاکستان کے کئی کرکٹ شائقین نے اپنی ٹیم کے ورلڈ کپ جیتنے کی امید کا اظہار کرنا شروع کر دیا ہے۔

ثاقب مومن نے لکھا ہے، “ایسا لگتا ہے کہ قدرت کا نظام لوٹ آیا ہے۔ جنوبی افریقا نے ہمیشہ ہماری مدد کی ہے۔ ایک اور صارف نے سوشل سائٹ ایکس پر لکھا ہے کہ پاکستان نے اس ورلڈ کپ کو دلچسپ بنا دیا ہے۔

مائیکل وان نے ایک نئی بحث شروع کر دی:

جنوبی افریقا کے ہاتھوں نیوزی لینڈ کی عبرتناک شکست کے بعد انگلینڈ کے سابق کپتان مائیکل وان نے ایک نئی بحث شروع کر دی ہے۔ وان نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ایکس پر بھارت اور پاکستان کے درمیان سیمی فائنل کا امکان ظاہر کیا ہے۔ اس کے بعد کیا ہوا؟لوگوں کی بڑی تعداد نے اس پر ردعمل دینا شروع کر دیا۔ جہاں کئی بھارتی کرکٹ شائقین کا کہنا تھا کہ بھارتی ٹیم کسی سے بھی مقابلے کے لیے تیار ہے۔

لیکن بہت سے بھارتیوں کو لگتا ہے کہ پاکستانی ٹیم سیمی فائنل تک نہیں پہنچ پائے گی، اس لیے مائیکل وان کی یہ پیش گوئی درست ثابت نہیں ہوگی۔ ون ڈے کرکٹ ورلڈ کپ کی بات کریں تو ہندوستانی ٹیم نے پاکستان کو ہر میچ میں شکست دی تھی۔ ورلڈ کپ میں اب تک ہندوستان آٹھ بار پاکستان کا سامنا کر چکا ہے اور تمام آٹھ بار جیت چکا ہے۔2011 ء کے ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں بھارت اور پاکستان کا ٹکراؤ ہوا تھا اور بھارت نے فتح حاصل کی تھی۔ اور آخر کار بھارت نے 2011 ء کا ورلڈ کپ جیت لیا۔

پاکستان کو سیمی فائنل کی دوڑ میں رہنا ہے تو کیا کرنا ہوگا؟

اگر پاکستان کو سیمی فائنل کی دوڑ میں رہنا ہے تو اسے 4 نومبر کو بنگلورو میں نیوزی لینڈ کو شکست دینا ہوگی۔اور اس کے بعد انگلینڈ کو 11 نومبر کو کولکتہ میں بھی شکست کا منہ دیکھنا پڑے ۔ لیکن اتنا کافی نہیں ہوگا۔ پاکستان کو دوسری ٹیموں کے نتائج پر بھی نظر رکھنی ہوگی۔ چوتھے نمبر پر موجود آسٹریلیا کے آٹھ پوائنٹس ہیں اور اسے ایک اور میچ کھیلنا ہے۔ نیوزی لینڈ کو بھی ایک اور میچ کھیلنا ہے۔

بھارت اور آسٹریلیا پہلے اور دوسرے نمبر پر ہیں اور یہ پہلے ہی طے ہے کہ یہ دونوں ٹیمیں سیمی فائنل کھیلیں گی۔1992 ء کی چیمپئن ٹیم کو امید کرنی ہوگی کہ نیوزی لینڈ، جنوبی افریقا یا آسٹریلیا اپنے بقیہ میچوں میں شکست کھائیں گے۔ اور پاکستان کو باقی دونوں میچز بھی بڑے مارجن سے جیتنے چاہیں۔ پہلی چار پوزیشنز پر پہنچنے والی ٹیمیں ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں پہنچیں گی۔

ٹاپ رینک کی ٹیم ممبئی کے وانکھیڑے اسٹیڈیم میں پہلے سیمی فائنل میں چوتھی پوزیشن کی ٹیم سے کھیلے گی۔ دوسرا سیمی فائنل دوسرے اور تیسرے نمبر پر آنے والی ٹیموں کے درمیان ہوگا۔ اگر پاکستان کسی طرح سیمی فائنل میں پہنچنے میں کامیاب ہو جاتا ہے تو ایک بار پھر ورلڈ کپ میں بھارت اور پاکستان کے درمیان میچ کا امکان پیدا ہو سکتا ہے۔

Share With:
Rate This Article