12 April 2024

Homeتازہ تریننیوزی لینڈ اور بنگلا دیش کی ٹیسٹ سیریز برابر

نیوزی لینڈ اور بنگلا دیش کی ٹیسٹ سیریز برابر

نیوزی لینڈ اور بنگلا دیش کی ٹیسٹ سیریز برابر

نیوزی لینڈ اور بنگلا دیش کی ٹیسٹ سیریز برابر

میرپور:(سنو نیوز) بنگلا دیشی ٹیم تاریخ بنانے میں ناکام ہو گئی، اسے نیوزی لینڈ کے خلاف سیریز کے دوسرے ٹیسٹ میچ میں 4 وکٹوں سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ اس کے ساتھ ہی 2 میچوں کی ٹیسٹ سیریز 1-1 سے برابر ہوگئی ہے۔ گلین فلپس اور مچل سینٹنر کی شراکت نے نیوزی لینڈ کو فتح سے ہمکنار کیا۔

لیفٹ آرم اسپنر اعجاز پٹیل (57 رنز دے کر 6 وکٹیں) کی شاندار گیند بازی کے بعد گلین فلپس اور مچل سینٹنر کی شاندار پارٹنرشپ سے دباؤ میں آکر نیوزی لینڈ نے چوتھے دن ہفتہ کو بنگلا دیش کو 4 وکٹوں سے شکست دے دی۔ بارش سے متاثرہ اس ٹیسٹ کو جیتنے کے لیے نیوزی لینڈ کو 137 رنز کا ہدف ملا تھا لیکن ٹیم 69 رنز پر 6 وکٹیں گنوانے کے بعد مشکل میں پڑ گئی۔

فلپس ایک بار پھر ‘ٹربل شوٹر’ بن گئے:

پہلی اننگز میں 72 گیندوں پر 87 رنز بنا کر ٹیم کو مشکلات سے نکالنے والے فلپس نے ایک بار پھر ٹربل شوٹر کا کردار ادا کیا۔ انہوں نے دوسری اننگز میں 48 گیندوں پر 40 ناقابل شکست رنز بنائے۔ فلپس نے سینٹنر کے ساتھ ساتویں وکٹ کے لیے 70 رنز کی ناقابل شکست شراکت بنا کر ٹیم کی جیت کو یقینی بنایا۔

سینٹنر نے 39 گیندوں میں 3 چوکے اور ایک چھکا لگا کر ناقابل شکست 35 رنز بنائے۔ مین آف دی میچ فلپس نے اپنی اننگز میں 4 چوکے اور 1 چھکا لگایا۔ بنگلا دیش کی جانب سے مہدی حسن نے 52 رنز کے عوض 3 وکٹیں حاصل کیں جبکہ دوسری اننگز میں تیج الاسلام نے 58 رنز کے عوض 2 وکٹیں حاصل کیں۔ شریف اسلام نے ایک وکٹ حاصل کی۔

بنگلا دیش تاریخ رقم کرنے سے محروم:

بنگلا دیش نے پہلی اننگز میں 172 رنز بنائے جبکہ نیوزی لینڈ نے 180 رنز بنائے۔ بنگلادیش نے پہلا میچ 150 رنز سے جیتا تھا اور اس کے پاس پہلی بار نیوزی لینڈ کے خلاف ٹیسٹ سیریز جیت کر تاریخ رقم کرنے کا موقع تھا لیکن دوسری اننگز میں ناقص بلے بازی کے باعث ٹیم نے یہ موقع گنوا دیا۔

ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے نیوزی لینڈ کی شروعات بھی خراب رہی۔ شوریفل نے ڈیون کونوے (2) کو ایل بی ڈبلیو آؤٹ کیا، جب کہ تائیجول نے کین ولیمسن (11) اور مہدی نے ہنری نکولس (3) کو آؤٹ کیا۔

میرپور میدان میں یادگار فتح:

ٹام لیتھم (26) اور ڈیرل مچل (19) بھی اچھے آغاز کو بڑی اننگز میں تبدیل کرنے میں ناکام رہے۔ جس کی وجہ سے ٹیم 69 رنز پر 6 وکٹیں گنوا بیٹھی۔ اس کے بعد فلپس نے سینٹنر کے ساتھ شاندار شراکت داری کی اور بنگلا دیش کا ناقابل تسخیر قلعہ سمجھے جانے والے میرپور گراؤنڈ میں ٹیم کو یادگار فتح دلائی۔

بنگلا دیش نے دن کا آغاز 2 وکٹوں پر 38 رنز سے کیا۔ بنگلا دیش کی دوسری اننگز میں صرف ذاکر حسن ہی نیوزی لینڈ کے گیند بازوں کا بہادری سے سامنا کر سکے۔ انہوں نے 86 گیندوں پر 59 رنز کی اننگز کے دوران 6 چوکے اور ایک چھکا لگایا۔

اس کے بعد بنگلا دیش نے نیوزی لینڈ کو 73 رنز پر 7 وکٹیں گنوا کر سیریز برابر کرنے کا موقع فراہم کیا۔سینٹنر نے اپنے لگاتار اوورز میں مشفق الرحیم (9) اور شہادت حسین (4) کو آؤٹ کیا جس کی وجہ سے بنگلا دیش کی آدھی ٹیم 88 رنز پر پویلین لوٹ گئی۔

 

Share With:
Rate This Article