Homeتازہ ترینعوام کو بلا سود ہزاروں الیکٹرک موٹر سائیکلیں دینے کا اعلان

عوام کو بلا سود ہزاروں الیکٹرک موٹر سائیکلیں دینے کا اعلان

Announcement of giving thousands of electric motorcycles to the people free of cost

عوام کو بلا سود ہزاروں الیکٹرک موٹر سائیکلیں دینے کا اعلان

لاہور:(اے پی پی) نگران وزیر اعلی پنجاب محسن نقوی نے تاریخ ساز اقدام کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی بارعوام کو بلاسود 26 ہزارالیکٹرک موٹر بائیکس اور رکشے دیئے جائیں گے۔

وزیر اعلی ٰمحسن نقوی نے مقامی ہوٹل میں محکمہ ٹرانسپورٹ پنجاب کی جانب سے منعقدہ خصوصی تقریب میں بلا سود الیکٹرک بائیکس اورالیکٹرک رکشے دینے کے پروگرام کاباقاعدہ اعلان کیا۔

وزیر اعلیٰ محسن نقوی نے پنجاب بھر میں چنگ چی رکشے کی رجسٹریشن پروگرام کابھی باضابطہ افتتاح کیا۔ پنجاب میں الیکٹرک رکشہ سازی کی صنعت کا باقاعدہ آغاز بھی کر دیا گیا ہے۔وزیر اعلیٰ محسن نقوی نے ساز گار کمپنی کے سی ای او کو الیکٹرک رکشہ سازی کا پہلا لائسنس دیا۔

وزیراعلیٰ محسن نقوی نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت بینک آف پنجاب کے تعاون سے طلبا و طالبات کو10ہزار الیکٹرک بائیکس بلاسود آسان شرائط پر دے گی جبکہ 10ہزار الیکٹرک رکشے بھی بلا سود پنجاب بینک کے تعاون سے دیئے جائیں گے۔

سپیشل افراد کو بلا سود 2 ہزار الیکٹرک تھری ویلر بائیکس دی جائیں گی جبکہ سرکاری ملازمین کو 2 ہزار الیکٹراک بائیکس بلا سود دی جائیں گی،اسی طرح سرکاری و نجی ملازمت پیشہ خواتین کو 2 ہزار الیکٹرک بائیکس دی جائیں گی۔وزیراعلی نے مزید کہا کہ پنجاب بھر میں سرکاری سطح پر پٹرول سے چلنے والی موٹر سائیکل خریدنے پر پابندی لگا دی ہے۔سرکاری محکمے آئندہ صرف الیکٹرک بائیک ہی خرید سکیں گے۔وزیر اعلی محسن نقوی نے چنگ چی رکشہ باڈی سٹینڈر ز پروگرام کے نفاذ کا بھی باقاعدہ اعلان کیا۔

وزیراعلیٰ محسن نقوی نے کہا کہ محکمہ ٹرانسپورٹ نے چنگ چی رکشوں کی رجسٹریشن کو عملی جامہ پہنانے کے لیے بہت محنت کی،سب کہتے تھے،چنگ چی رکشوں کی رجسٹریشن کرنا ممکن نہیں لیکن محکمہ ٹرانسپورٹ نے نا ممکن کو ممکن کر دکھایا،محکمہ ٹرانسپورٹ کے تمام اقدامات مثالی ہیں۔ وزیراعلی نے کہا کہ لاہور دنیا کا آلودہ ترین شہر ہے ہمیں آلودگی کے خاتمے کے لئے اپنا کردار ادا کرنا چاہیے،بلا سود الیکٹرک بائیکس و الیکٹرک رکشہ پروگرام کے لیے پنجاب بینک حکومت پنجاب کی معاونت اور لیڈنگ رول ادا کر رہا ہے،طلبا وطالبات کے لئے بلا سود الیکٹرک بائیکس دینا ایک مثالی قدم ہے۔

محسن نقوی نے کہا کہ چین میں فیول والی بائیک نہیں چلتی بلکہ الیکٹرک بائیکس چل رہی ہیں،آئندہ تین سال میں اگر الیکٹرک بائیکس مکمل طور پر متعارف کرا دی جائیں تو ماحول پر بہت مثبت اثرات پڑیں گے،الیکٹرک بائیکس کو متعارف کرانا ماحول کو بہتر رکھنے کے لیے بہت ضروری ہے، الیکٹرک بائیکس کو عام کرنے کے لیے مضبوط ارادے اور کاوشوں کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ فیول والی گاڑیوں کو الیکٹرک گاڑیوں میں کنورٹ کرنے کے لیے محنت کرنی پڑے گی،آئندہ نسل کا مستقبل محفوظ کرنے کے لیے اور زندگی کے 10 سال بچانے کے لیے فیول والی گاڑیاں ترک کرنا پڑیں گی۔وزیراعلی نے کہا کہ الیکٹرک رکشے کامعیار بہت اعلی ہے،آلودگی ختم کرنے کے لیے الیکٹرک رکشے بھی متعارف کرا رہے ہیں،10 ہزار بلا سود الیکٹرک رکشے فراہم کریں گے،خصوصی افراد کے لیے 2 ہزار تھری ویلرز بائیکس دی جائیں گی۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ سول سیکرٹریٹ کے ملازمین کو دو ہزار الیکٹرک بائیکس بلا سود فراہم کی جائیں گی جبکہ نجی و سرکاری ملازمت پیشہ خواتین کو بھی 2 ہزار الیکٹرک موٹر بائیکس دی جائیں گی۔انہوں نے کہا کہ الیکٹرک گاڑیوں اور بائیکس متعارف کرانے سے ماحول بہتر ہوگا اور انڈسٹری کو فروغ ملے گا۔وزیراعلی نے کہا کہ میری دعا ہے کہ پاکستان میں گاڑیاں بھی الیکٹرک ہو جائیں،آئندہ کوئی بھی ادارہ الیکٹرک با ئیک کے علاوہ کوئی بائیک نہیں خریدسکے گا،ایکسل لوڈ پر عمل درآمد کروانا ایک مشکل کام تھا جسے محکمہ ٹرانسپورٹ اور پولیس نے بڑی محنت سے سرانجام دیا،لوگ احتجاج کر رہے ہیں لیکن وہ نہیں جانتے کیا کہ روڈ کے اوپر زیادہ وزن لانے کی وجہ سے کتنا نقصان ہوتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت اربوں روپے لگا کرسڑک بناتی ہے اور لوگ زیادہ وزن ڈال کر اسے خراب کر دیتے ہیں،ایکسل لوڈ مینجمنٹ پر عملدرآمد میں کسی قسم کی نرمی نہیں برتی جائے گی۔وزیراعلی نے کہا کہ بڑی محنت کے ساتھ ڈرائیونگ لائسنس پر عمل درآمد کروا رہے ہیں،لاہور میں صرف 10 فیصد لوگوں کے پاس ڈرائیونگ لائسنس تھا،70 لاکھ گاڑیاں اور7 لاکھ ڈرائیونگ لائسنس تھے،رات دو بجے خدمت مرکز کا دورہ کیا تو دو تین سو لوگ تب بھی لائسنس بنوا رہے تھے ۔

انہو ں نے اعلان کیا کہ لائسنس بنوانے کے لئے نئی فیس کا اطلاق اب 16جنوری سے ہوگا۔شہری 15جنوری تک پرانی فیس ادا کرکے ڈرائیونگ لائسنس بنوا سکتے ہیں۔صوبائی وزیر ٹرانسپورٹ ابراہیم حسن مراد نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعلی محسن نقوی جس طرح محنت کے ساتھ عوام کی خدمت کر رہے ہیں اس کی کوئی دوسری مثال نہیں۔ہم نے ایک برس کے دوران 200 فیصد محنت اور 300 فیصد ایمانداری کے ساتھ کام کیاہے۔ وزیراعلی محسن نقوی نے خلوص نیت اور دن رات عوام کی خدمت کی ہے او رہم ان کے رضا کار ہیں۔انہوں نے کہاکہ وزیراعلی پنجاب محسن نقوی اور ان کی کابینہ کوئی مراعات نہیں لیتے۔وزیراعلی اور وزرا اپنا خرچہ خود اٹھاتے ہیں،تنخواہ بھی سرکاری خزانے سے وصول نہیں کرتے۔

وزیراعلیٰ نے الیکٹرک موٹر بائیکس رکشہ اور گاڑیوں کی نمائش دیکھی۔وزیر اعلی محسن نقوی نے الیکٹرک رکشہ میں سواری کی اور الیکٹرک رکشہ کے معیار کی تعریف کی۔وزیر اعلی محسن نقوی نے الیکٹرک بائیکس اور گاڑیوں کا معائنہ کیا اور قیمت اور پائیداری کے بارے میں دریافت کیا۔چین کے قونصل جنرل ژائو شیرین ،امریکہ کی قونصل جنرل کرسٹن کے ہاکنز،صوبائی وزرا،ایس ایم تنویر،منصور قادر،عامرمیر،ابراہیم حسن مراد، بلال افضل،چیف سیکرٹری زاہد اختر زمان،بینک آف پنجاب کے سربراہ ظفر مسعود،سیکرٹری ٹرانسپورٹ،سی سی پی او،کمشنر لاہور اور مختلف کمپنیوں کے اعلی حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔

Share With:
Rate This Article