19 April 2024

Homeتازہ ترینعرفان پٹھان کا غزہ جنگ پر ٹویٹ، بھارتی بھڑک اٹھے

عرفان پٹھان کا غزہ جنگ پر ٹویٹ، بھارتی بھڑک اٹھے

سابق انڈین کھلاڑی عرفان پٹھان شلوار قمیض پہنے کھڑے ہیں

عرفان پٹھان کا غزہ جنگ پر ٹویٹ، بھارتی بھڑک اٹھے

ممبئی: (سنو نیوز) سابق ہندوستانی کرکٹر عرفان پٹھان نے جمعہ کو غزہ میں حماس اور اسرائیل کے درمیان جاری تنازع پر ٹوئٹ کیا اور عالمی رہنماؤں سے اپیل کی کہ اس تنازع کو جلد از جلد ختم کیا جائے۔

عرفان پٹھان نے لکھا کہ “غزہ میں ہر روز دس سال سے کم عمر کے معصوم بچے مارے جا رہے ہیں اور دنیا خاموش ہے۔ ایک کھلاڑی ہونے کے ناطے میں صرف اپنی آواز اٹھا سکتا ہوں۔ لیکن بہت ہو گیا، دنیا بھر کے رہنماؤں کو متحد ہو کر موت کے اس سلسلے کو ختم کرنا چاہیے۔”

خیال رہے کہ فلسطینی تنظیم حماس نے 7 اکتوبر کو اسرائیل پر غیر معمولی حملہ کیا تھا۔ اس کے بعد اسرائیل نے حماس کے خلاف اعلان جنگ کر دیا اور غزہ کی پٹی پر بمباری شروع کر دی جو اب تک جاری ہے۔

جہاں حماس کے حملے میں اسرائیل میں 1400 سے زائد افراد مارے گئے۔ اس تنازع میں اب تک ہزاروں افراد شہید ہو چکے ہیں۔ حماس کے زیر کنٹرول وزارت صحت کے مطابق ان میں 3500 سے زیادہ بچے شامل ہیں۔

لیکن اس ٹویٹ کے بعد عرفان پٹھان کو ہندوستانی صارفین کی جانب سے ٹرول کیا جا رہا ہے۔ ہیمیر ڈیسائی نامی انڈین صارف نے لکھا کہ عرفان پٹھان نے کشمیری پنڈتوں کے قتل عام پر آواز کیوں نہیں اٹھائی؟ حماس کے دہشت گرد اسرائیلی لوگوں کے گھروں میں گھس کر لڑکیوں کو اغوا کر کے بچوں اور معصوم لوگوں کو قتل کر رہے تھے؟

اس کے ساتھ ہی پاکستانی صحافی وجاہت کاظمی نے لکھا ہے عرفان پٹھان کے اپنے ٹویٹ پر تبصرہ کرنے کا آپشن بند ہونا ظاہر کرتا ہے کہ ان کے ٹویٹ پر بھارتی کس قسم کا ردعمل دیں گے۔ اس بیمار ذہنیت کو سمجھنے کے لیے ذرا اقتباس ریٹویٹ کو دیکھیں۔ لیکن میں اس بات کی تعریف کرتا ہوں کہ انہوں نے غزہ میں تقریباً ایک ماہ سے جاری ظلم و بربریت کے بعد بالآخر آواز اٹھائی ہے۔

بھارتی ٹوئٹر صارف اتل مشرا نے لکھا ہے کہ ’’پاکستانی افغان شہریوں کو اپنے بچوں سمیت ملک بدر کر رہے ہیں۔ اس پر آپ کا کیا کہنا ہے؟‘‘

رشی باگڑی نے لکھا ہے “اسے کس نے شروع کیا ہے؟ بچوں سمیت 1400 معصوم شہریوں کو کس نے مارا؟ 200 معصوم شہریوں کو کس نے اغوا کیا؟

Share With:
Rate This Article